Close
گفتگو ڈاٹ پی کے پر خوش آمدید

ملکی تاریخ کے سب سے بڑے سکالر شپ کا اجراء

شاہد کھوکھر
۔۔۔۔۔۔۔۔
انسانی شعور کےلیے بہت سے لوازمات چاہیے ہوتے ہیں۔
جیسے تربیت،،،ماحول،،،اور اس جیسی ملتی جلتی تمام چیزیں تمام اسباب تمام لوازمات بہت ہی ضروری ہیں لیکن ان سب کے ساتھ جو لازم و ملزوم ہے وہ ہے تعلیم۔
تعلیم ایک ایسا راستہ ہے جو نا صرف فرد واحد کو نفع دیتی ہے بلکہ معاشرے کا بگاڑ دور کرتی ہے قوموں کو عزت اور سر بلندی دیتی ہے فخر دیتی ہے۔
بغیر تعلیم کے اگر باقی تمام لوازمات میسر ہوں بھی تو ان سے صرف ضلالت اور گمراہی ہی پھیلتی ہے۔
ایسے ایسے بگاڑ پیدا ہوتے ہیں کہ انسانیت تو انسانیت حیوانیت بھی شرما جاۓ۔
تعلیم کتنی اہم اور ضروری ہے اس کا اندازہ ہم قرآن مجید فرقان حمید اور آپ جناب مُحَمَّد ﷺ کی تعلیمات سے لگا سکتے ہیں۔
چند فرمودات کا مفہوم آپکی گوش گزار کرنا چاہوں گا۔
اللہ تعالی کی طرف سے سب پہلی وحی جو نازل ہوٸ اسکا مفہوم بھی یہی بنتا ہے کہ اے نبی جی پڑھیے اپنے پروردگار کے نام سے جو آپکا خالق ہے اور پڑھیے اپنے رب کے نام سے جو بڑا نوازنے والا ہے عطا کرنے والا ہے۔
یعنی تعلیم کی اہمیت اللہ نے بتا دی کہ کتنی زیادہ ہے۔
ایک روایت کا مفہوم ہے کہ جب آدم علیہ اسلام کوبنایا گیا تب انہیں بھی سب سے پہلے علم ہی سکھایا گیا
اب چند فرمودات پیارے نبی مُحَمَّد ﷺ کے بھی پیش کر دینا بہت ضروری ہیں کیونکہ علم کی اہمیت اللہ اور اللہ کے رسول سے بہتر کوٸ نہیں جانتا اور نا ہی کوٸ سکھا سکتا ہے نا ہی سمجھا سکتا ہے
تعلیم ہر مرد اور عورت پر فرض ہے۔
مجھے معلم بنا کر بھیجا گیا ہے تاکہ میں آپ کو علم سکھاٶں
مشہور واقعہ ہے جو آپ سب نے سن رکھا ہے اسے بھی یہاں ذکر نا کرنا شاید اس تحریر کے ساتھ ناانصافی ہو گی جب آپ نے کفار کے قیدیوں سے کہا کہ جزیہ نہیں دے سکتے تو دس دس مسلمانوں کو لکھنا پڑھنا سکھا دو تو آزادی ہے آپکو۔۔۔۔
یہاں یہ بات بھی ذہن نشین کر لیجیے کہ ان کفار سے دنیا کی تعلیم سکھانے کےلیے کہا گیا تھا یعنی آپ جناب مُحَمَّد ﷺ کے نزدیک جہاں تعلیم اسلام اہمیت رکھتی تھی وہیں دنیاوی تعلیم بھی اہمیت کی حامل تھی اس لیے یہ شرط عاٸد کی گٸ تھی۔
غرض بیسویوں ایسی آیات اور احادیث موجود ہیں جن کا حوالہ دیا جا سکتا ہے لیکن مقصد یہاں کوٸ لمبی چوڑی تقریر کرنا نہیں ہے بس بات کو سمجھانا ہے اگر سمجھ آ جاۓ۔
ان سب حوالہ جات اور اتنی لمبی تمہید کا مقصد صرف اور صرف تعلیمی اہمیت کو اجاگر کرنا ہے۔
اسی سلسلے کی ہی ایک کڑی ملک پاکستان میں بھی ملتی ہے جہاں مختلف حکومتوں نے اپنے اپنے ادوار میں اپنی قابلیت کے مطابق تعلیم پر زور دیا اور اس کےلیے وہ کوشاں رہی۔۔جن میں مختلف قسم کے پیکج دیے جاتے رہے چھوٹے بڑے تعلیمی اداروں کو تاکہ تعلیم آسان سے آسان ہو جاۓ۔
لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ ملک پاکستان کی تاریخ میں سب سے بڑا تعلیمی پیکج کس حکومت نے متعارف کروایا اگر نہیں جانتے تو پھر وہی میں آپ کو بتانے لگا ہوں۔
جی ہاں تو وہ ہے موجودہ حکومت یعنی تحریک انصاف کی حکومت عمران خان کی حکومت۔۔
جنہوں نے پچھلے ہی دنوں اسلام آباد کے ایک انڈر گریجویٹ کالج کی تقریب میں یہ لانچ کیا ہے پیکج جس میں 50 ہزار سالانہ طلبإ مستفید ہو سکیں گے یعنی جنہیں وظیفہ دیا جاۓ گا۔
2 فیصد کوٹہ مخصوص لوگوں یعنی کہ معذور افراد کےلیے رکھا گیا ہے جبکہ 50 فیصد کوٹہ خواتین کا رکھا گیا ہے۔
اور اس پیکج سے مدارس کے بچے بھی مستفید ہو سکیں گے جس کا باقاعدہ افتتاح ایک پورٹل بنا کے کر دیا گیا ہے جسے آپ اس نام سے سرچ کر سکتے ہیں۔
ehsaas.hectare.gov.pk
آخری تاریخ 10 دسمبر 2019 تک ہے

اسی پیکج کے تحت راشن کارڈ کا بھی اجرإ کیا گیا ہے۔

یاد رہے یہ پیکج انڈر گریجویٹ طلبإ کےلیے لانچ کیا گیا ہے جو کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار ہوا ہے اگرچہ سابقہ حکومتیں بھی کرتی رہیں ہیں ایسے پیکج لانچ لیکن وہ پی ایچ ڈی یا ماسٹر ڈگری کےلیے ہوتے تھے۔
مزید معلومات کےلیے چند سطریں اوپر دی گٸ ویب سائٹ کا وزٹ کیجے۔

جس قوم کے معمار زندہ ہوں
اس قوم سے موت بھی ڈرتی ہے

آئیے دیکھیے ہم فروغ تعلیم کےلیے کیسے کوشاں ہیں ۔

اس تحریر کے بارے میں اپنی رائے سے آگاہ کریں اور گفتگو ڈاٹ پی کے سے جڑے رہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

0 Comments
scroll to top