Close
گفتگو ڈاٹ پی کے پر خوش آمدید

سات زہریلے

کیا آپ کی زندگی میں ایسے افراد ہیں ہے جن کی موجودگی محض آپ کی زندگی میں منفیت/ مصیبت کا باعث ہے۔۔ مکمل تحریر پڑھنے کیلئے لنک پہ کلک کریں

آپ کی زندگی

زوہیب اکرم
———
کیا آپ کی زندگی میں ایسے افراد ہیں ہے جن کی موجودگی محض آپ کی زندگی میں منفیت/ مصیبت کا باعث ہے۔۔
جن سے آپ کو کوئی فائدہ نہیں ،کوئی جذباتی آرام نہیں، کوئی پروفیشنل بھلائی نہیں۔
ان کی موجودگی، آپ کی زندگی سے مثبت توانائیوں کو نچوڑنے کے علاوہ کوئی معنی نہیں رکھتی۔

اگر ایسا ہے تو،
ایسے افراد کی نشاندہی کے لیے آپ کو، درج ذیل تراکیب پر عمل کرنا پڑے گا ، اور جیسے ہی آپ کو ان نشان زد کر لیں
انہیں اپنی زندگی سے نکال باہر کیجئے ،
یا پھر ان کی زندگی سے نکل جائیں
کیوں کہ آپ بہرحال ، اس بات کا حق رکھتے ہیں کہ آپ کی زندگی میں تمام ایسے افراد شامل ہوں، جو آپ سے محبت کرتے ہوں، یا آپ کو ان سے کسی نہ کسی طور فائدہ پہنچتا ہوں.
جن کی مجلس میں آپ خود کو مضبوط تصور کرتے ہوں۔

ایسے افراد کو عرف عام میں،ٹاکسک یا قنوطی / منفیت سے بھرے ہوئے کہا جاتا یے۔

Toxic People – زہریلے یا منفییت سے بھرے افراد کو کیسے
پہچانیں ؟

پہلا زہریلا۔

Conversational Narcissist – خودپسندی کی انتہا کو

پہنچا ہوا ،مداخلت کار، جو نا تو آپ کو بولنے دے گا نہ آپ کی بات سنے گا، نہ آپ کی رائے کو وزن دے گا، جو صرف اور صرف اپنی رائے دینے اپنی بات کرنے ،اور اپنی بات کو منوانے پہ مصر رہتا ہوں

دوسرا زہریلا

The Straight Jacket – آپ کی رائے/معاملات کو
موٹے کپڑے سےباندھ دینے والا،

ایسا شخص نہ صرف آپ کی رائے، موقف، شخصیت، ذہن بلکہ آپ کی پوری زندگی پر اپنا کنٹرول چاہتا ہے ۔
یہ تب تک آپ کے ساتھ اختلاف کرتا چلا جائے گا جب تک آپ نالاں ہو کر اس سے اتفاق نہ کر لیں۔
یا مایوس ہو کر موقف ہی چھوڑ بیٹھیں۔
جیسے ہی ، جب بھی ممکن ہو ،ایسے افراد سے کنارہ کریں ورنہ،
یہ شخص آپ کی فکری آزادی، آپ کی سوچوں، اور آپ کی کیفیات کو راکھ کر دے گا۔

تیسرا زہریلا

Emotional Moocher – جذباتی طفیلیا

موچر یعنی، ایسا شخص جو صرف لینے پر یقین رکھتا ہو، بدلے میں کچھ دینے پر نہیں، تعلق تو لین دین کا نام ہے ؟ رائٹ ؟

ایسے شخص کو روحانی ویمپائر بھی کہتے ہیں، کیونکہ یہ آپ کی زندگی سے تمام کی تمام مثبت توانائی نچوڑ کر رکھ دے گا
اور آپ کے جذباتی سر چشمے قحط گائیں گے۔
اپنے اطراف میں دیکھیں ، ایسے افراد جن کے پاس ہمیشہ کچھ نہ کچھ اداس ہوتا ہے ،جو ہمیشہ منفیت پر مائل ہوتے ہیں، جو مجالس میں بیٹھ کر صرف اور صرف مسائل سناتے ہیں، یا پھر پوری کی پوری محفل کے دوران, اپنی المیہ نمازندگی کو سامنے رکھتے ہوئے ، شرکاء محفل کی مثبت توانائیوں ککو خشک کر کے رکھ دیتے ہیں
کیونکہ ان کے پاس کہنے کے لیے کچھ بھی، کچھ بھی، ایک تنکا بھی مثبت نہیں ہوتا ,اگر یہ آس پاس نظر آئیں تو یہ ٹھیک ہونے والے نہیں، ان سے قطع تعلق کیجیے۔

چوتھا زہریلا

Drama Magnet – ڈرامے باز مظلوم

یہ زہریلے افراد کی وہ چوتھی ٹائپ ہے ،جو مسلسل اپنی مکار قسم کی ڈرامے بازیوں سے، توجہ حاصل کرنے کی ،گھٹیا کوشش کرتے رہتے ہیں, اور اکثر، کامیاب بھی ہوجاتے ہیں۔
یہ معاشرے میں پھیلی ہوئی نرم خوئی یا غیر ضروری اور غیر متعلقہ مٹھاس ، یا حساسیت کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہیں۔

ان کے ساتھ ہمیشہ کچھ نہ کچھ غلط ہی ہوتا ہے، اور صرف انہی کے ساتھ ہوتا ہے۔
ابھی ایک مسئلہ حل نہیں ہوتا کہ، دوسرا سر اٹھا لیتا ہے ۔
یہ ڈرامائی حالات / صورتحال کے لئے مقناطیس کی سی حیثیت رکھتے ہیں
ان کے بقول، برے حالات، برے معاملات، مظلومیت، کسمپرسی بےبسی، اداسی ، ان کی طرف گویا کھچی چلی آتی ہیں۔
طرفہ تماشا
خیر، طرفہ تماشا یہ ہے، کہ
یہ آپ سے ہمدردی، دلسوزی ،گداز، نرمی ،مروت، سب چاہیں گے لیکن، آپ کی نصیحت یا مشورہ بالکل نہیں ۔
اور اس پر عمل تو کرنا درکنار،سننے پر بھی تیار نہ ہوں گے۔
کیونکہ ،ان کا ذہنی پیٹرن، کچھ اس طرح رواں ہوتا ہے کہ، یہ صرف پرابلمز لے کر آتے ہیں، اور اگر آپ کی نصیحت، ان کا مسئلہ، حل کر دیں، تو یہ ان کی سوچ کے ربط یعنی پیٹرن، کے خلاف چلا جاتا ہے۔
کیوں کہ ،اول تو یہ مسئلہ حل کرنے کی نیت ہی نہیں رکھیں گے ،لیکن اگر ہو بھی جائے تو یہ ان کے لیے شومئ قسمت کا سا، سین ہوگا، اور پھر یہ ،دوسرا پرابلم لے آئیں گے،
یعنی، ان کا معاملہ مسئلہ کا حل نہیں، مسلہ اٹھانا ہے
آپ نے سنا ہو گا جن کا کوئی مسئلہ نہیں ہوتا وہ مسئلہ بنا لیتے ہیں بس یہ وہی لوگ ہوتے ہیں۔
اگر آپ کا ان کے ساتھ کوئی تعلق ہے تو یاد رکھئیے یہ محض کمپلین کمپلین ،کمپلین، مسئلے، مسئلے، یہی سناتے رہیں گےجہاں، یہ مظلوم ہوں گے اور دوسرا ظالم،
سارا قصور سامنے والے کا ہوگا اور یہ معصوم ہوں گے ۔
کیونکہ اس طرح انہیں محسوس ہوتا ہے کہ یہ توجہ کا مرکز اور زیادہ اہم ہیں۔
مشکلات میں لتھڑی ہوئی ،مظلومیت کی ماری، ان کسمپرسی کی پوٹلیوں سے خبردار رہیں،
ورنہ کسی دن ،آپ بھی، ان کے ڈرامے کا محض ایک کردار بن کے رہ جائیں گے۔
اور پھر کہیں گے
مظلوموں کا ساتھی ہے، الطاف حسین الطاف حسین۔

۔
پانچواں زہریلا

Jealous Judgmental – JJ – حاسد جج

تھوڑی سی تگ و دو کے بعد، آپ بھی اس قابل ہو جائیں گے کہ ، ایسے افراد کو، میلوں دور سے پہچان/ سونگھ لیں۔

جیلس ججمنٹل ، یعنی حاسد افراد۔ اور ایسے شدید حاسد افراد، جو کہ سامنے والے کو، جانے ،سوچے ،سمجھے بغیر، کٹہرے میں کھڑا کر کے فیصلہ سنا دے.
وہ اس قدر زہریلے ہوتے ہیں, اور ان کا اندر منفیت /نفرت سے اتنا بھرپور ہوتا ہے۔ گویااپنے آپ سے بے جا نفرت, اپنے حلقہ احباب سے نفرت, ماحول سے نفرت, گردوپیش سے نفرت

غرض ، یہ لوگ اپنے اطراف میں موجود، کسی بھی شخص کے لئے ،خوش نہیں رہ سکتے۔

ان کے اندر کا بغض و حسد ،کیسے باہر آتا ہے ؟
گمان
ججمنٹ
تنقید
یعنی
بغیر سوچے، سمجھے، جانے، پہچانے ، بغیر ،کسی کی بھی ذات پر فتوی/فیصلہ جڑ دینا۔
ان کے خیال میں، ان کے علاوہ ،دنیا کا ہر شخص کسی نہ کسی معاملے، میں نااہل ہے ،ناقص ہے، نا اہل ہے، اور اس قابل نہیں کہ اس سے تعلق رکھا جائے۔
اور یہ تو آپ سب ہی جانتے ہونگےکہ،
کوئی بھی شخص ،آپ سے بغیر کسی مناسب وجہ کے، کسی اور کے بارے میں، گپ شپ کے انداز میں ، اس کی برائیاں کرے، اس کے بارے میں زہر اگلے، اور کچے پکے شبہات کو یقین میں بدل کر بتانے لگے
تو الرٹ ہوجائیے، یہی وہ زہریلا شخص ہے ،جس سے آپ کو دور ہونے کی ضرورت ہے۔
کوئی پتہ نہیں کہ، یہ شخص، آپ کے پیٹھ پیچھے، آپ کے بارے میں کیا کیا باتیں کرتا ہوگا۔

چھٹا زہریلا

The Fibber – لپاڈیا، گپی، جھوٹا

کسی بھی تعلق میں جھوٹ تو ویسے ہی زہر کی حیثیت رکھتا ہے ، لیکن اگر آپ کا واسطہ ،کسی ایسے زہریلے یا منفی آدمی ,سے پڑجائے، جس کی خاصیت ہی جھوٹ بولنا ہو، اور اس انتہا کا جھوٹ بولنا ہو کہ، باقاعدہ پورا سین بنا کر، کہانی بنا کر، کردار ڈال کر جھوٹ بولے،
ایسا جھوٹ۔

رشتے کو زہر کر دیتا ہے

اور تعلق کو نیلا

آپ کسی سے کچھ کہو، کسی اور سے کچھ اور کہو، خود سے کچھ کہو، باہر والوں سے کچھ کہو ہو، اس کا مطلب یہ ہے کہ، آپ کے ساتھ جو شخص، بھی تعلق میں ہوگا ،وہ وہ لمحہ لمحہ آپ کے الفاظ پر شکوک کا اظہار کرے گا ،ظاہر سی بات ہے جب آپ ہر بات کو جھوٹ کی ملمع کاری کرکے کہانی کاری کرکے بیان کریں گے تو ایسا کیسے ممکن ہے آپ کے لفظ کو چیک نہ کیا جائے؟

میں نے سب تو نہیں لیکن اکثر عورتیں بہرحال ایسی دیکھی ہیں
اب یہ جملہ پڑھ کر کچھ آنچل کے گلابی محافظ آجائیں، لیکن ان کے کلسنے سے حقیقت نہیں بدلتی۔
اور ڈیڑھ سے دو سال کے اندر ایک عورت اور ایک مرد انتہا کا جھوٹا دیکھا، یعنی میں خود حیران ہوتا ہوں کہ چلو عورت کا اتنا مسئلہ نہیں کہ فطرت ہی ٹیڑھی ہے لیکن مرد جھوٹا کیسے ہو سکتا ہے ، جھوٹ تو بزدلی کی نشانی ہے
میرا ماننا ہے کہ مرد بدکردار ہوسکتا ہے ،گھٹیا ہو سکتا ہے، نیچ ہو سکتا ہے، اور وہ سب منفی ٹائٹل جو آپ اپنی زنانہ مردانہ مکس انا کو خوش کرنے کے لیے دینا چاہیں دے سکتے۔ لیکن مرد اگر مرد ہے، اور صرف شناختی کارڈ اور شناختی اعضا کی وجہ سے مرد نہیں بلکہ فطرتا بھی مرد ہے تو مرد کچھ بھی ہوجائے،جھوٹا نہیں ہو سکتا۔

بہرحال
اس طرح اس جھوٹے/جھوٹی کے تعلقات کی خیانت یعنی جھوٹ آپ کی پازیٹیو انرجی کو ڈرین کرلے گی یعنی ختم کردے گی۔
آپ کو ایک بات بتاؤں یہ میرا ذاتی نظریہ ہے ہوسکتا ہے غلط ہو بلکہ اکثر خود ترسی کا شکار اسے غلط ہی کہتے ہیں۔ کہ
یہ جو ہمارے معاشرے میں، اکثر ، چلے چھوڑئیے معاشرے کی بات نہیں کرتے ورنہ معاشرے کے محافظ بھی آ جائیں گے۔
بہرحال نظریہ یہ ہے کہ اگر کوئی شخص بدکردار ہے، کوئی عورت کردار کی کچی ہے، حتی کے کوئی طوائف بھی ہے ،تو ممکن ہے آپ اسے سدھار سکیں ، کیوں وہ کچھ بھی کر رہا ہے، غلط کر رہا ہے، لیکن شفافیت کے دائرے میں ہے،جھوٹ یا نیکوکاری نہیں جھاڑ رہا ۔ لیکن اگر کوئی بظاہر پاکیزہ فطرت مرد عورت، جھوٹا ہے تو یقین کیجئے مذکورہ بالا تمام کیٹگریز اس کے سامنے کم ہے
مختصر یہ کہ جھوٹے گپی بھی اور افواہ سے بچئے یے تعلق کوئی بھی ہو پتہ کرنے میں ایک لمحہ قیمت لگائی ہے نا موجود کر دیجیے نابود کر دیجیے سامنے موجود ہو، اور کوئی وجود نہ ہو۔

ساتواں اور آخری زہریلا

The Tank – دوسروں کے بخیے ادھیڑ دینے والا۔

جیسے کہ اصل ٹینک ہوتا ہے، اپنی راہ میں آنے والی، ہر چیز کو کچلتا ہوا ،نیست و نابود کرتا ہوا، آگے بڑھتا چلا جاتا ہے
اسی طرح زہریلوں کی ایک قسم کو ہیومین ٹینک ہی کہا جاتا ہے۔

ان میں درج ذیل۔خصوصیات ہوں گی۔

یہ ہمیشہ ٹھیک ہوگا۔
صرف اور صرف اپنے موقف کو حقیقت سمجھے گا۔
دوسرے کے تخیل اور احساسات کو جوتی کی نوک پر رکھے گا۔
اپنے آپ کو، سب پہ فوقیت دے گا۔

ذاتی تعلقات میں انتہائی مغرور اور متکبر ہوگا۔
کسی بھی محفل میں اپنے آپ کو، سب سے زیادہ ذہین خیال کرے گا۔ اسی لیے اسے دوسروں کا اختلاف یا دوسرا شخص جو اس سے ہٹ کر بات کر رہا ہوں ایک چیلنج کے طور پر نظر آتا ہے

ایسا تقریباناپید ہے کہ یہ لوگ دوسروں کو برابری کی سطح پر رکھیں۔۔

ان سے تعلقات، لگاوٹ ،محبت ،رغبت، انتہائی شدید مشکلات کا سبب بن سکتی ہے۔۔
جب بھی آپ کو یہ محسوس ہو کہ آپ کی رائے کو محض نیچا دکھانے کے لیے، بلڈوز کیا جارہا ہے، اور آپ کے خیالات کی عزت نہیں کی جارہی ، فورا سے سے ایسے شخص / اشخاص سے دوری اختیار کیجئے۔

اس تحریر کے بارے میں اپنی رائے سے آگاہ کریں اور گفتگو ڈاٹ پی کے سے جڑے رہیں ۔

زوہیب اکرم

کراچی کے رہائشی اور سند یافتہ انجینئر ہیں ۔لیکن لکھنے پہ آئیں تو ان کا قلم ایسے لفظ لکھتا ہے جو پڑھنے والے کو نوچنے اور دبوچنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔شخصیت الفاظ ہی کی طرح ذومعنی ہے جو الجھاو کے ساتھ تال میل کرکے ایک منفرد سراپے کو جنم دیتی ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

0 Comments
scroll to top